’’چکوال ‘‘جمعیت علمائے پاکستان سنی تحریک اوردیگر جماعتوں نے چکوال پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ

0
119
chakwal2چکوال(نمائندہ خصوصی)جمعیت علمائے پاکستان سنی تحریک اوردیگر جماعتوں نے چکوال پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا جس کی قیادت انجمن طلباء اسلام کے مرکزی رہنما نوید حیدری ،قاری لقمان شاہ ،علامہ شفیق قادری، پیر حسنین شاہ ،محسن ملک اور دیگر نے کی۔ اس موقع پر ایک قرارداد منظور کی گئی جس میں ممتاز حسین قادری کو جبراً شہید کیے جانے کی مذمت کی گئی اور اسے لیگی حکومت کی بداہلی قرار دیا گیا۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ ممتاز قادری کو شہید کر کے علمائے اہلسنت کے ساتھ معاہدہ کی خلاف ورزی کی گئی ہے اور میڈیا نے بھی غیر ذمہ داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے غازی ممتاز حسین قادری کے تاریخی جنازہ کو نہ دکھا کر اہلسنت کے جذبات کومجروح کیا۔ اس ظلم پر بھی اہلسنت پرامن رہے ،عالمی میڈیا کی رپورٹ بھی یہ واضح کرتی ہے کہ اس عظیم اجتماع جس میں کروڑوں افراد نے شرکت کی تھی میں ایک شیشہ تک نہ توڑا گیا، حکومت کے مسلسل عدم تعاون کی وجہ سے لبیک یا رسول اللہ تھریک کا آغاز ہوا جو اب تک پرامن ہے۔ اس موقع پر متعدد قراردادیں منظور کی گئیں جس میں اسلام آباد میں موجود قائدین کی مکمل حمایت کی گئی اور مطالبہ کیا گیا کہ مذاکرات بامقصد کیے جائیں۔ یہ بھی طے پایا کہ اگر حکومت نے مطالبات منظور نہ کیے تو احتجاجی تحریک پورے ملک میں پھیلے گی اور جگہ جگہ دھرنے دئیے جائیں گے۔ چکوال میں بھی احتجاجی دھرنا دیا جائے گا۔ جبکہ اسلام آباد کی طرف بھی مارچ ہوگا۔اس موقع پر مطالبہ کیاگیا کہ ناموس رسالت کے مرتکب مختلف جیلوں میں بند تمام مجرمان کو فوری طور پر پھانسی دی جائے۔ آسیہ ملعون کو بھی فی الفور پھانسی کے پھندے پر لٹکایا جائے۔

تبصرے

شیئر کریں

کوئی تبصرہ نہیں

جواب چھوڑ دیں