’’تلہ گنگ‘‘شوکت اقبال ساکن ملکوال نے انصاف کے حصول کیلئے اپیل

0
211
2تلہ گنگ(تحصیل رپورٹر) شوکت اقبال ساکن ملکوال نے انصاف کے حصول کیلئے چیف جسٹس سپریم کورٹ اور سیکرٹری سکولز ایجوکیشن پنجاب سے اپیل کی ہے کہ وہ اسے انصاف فراہم کریں انہوں نے بتایا کہ محکمہ تعلیم ضلع چکوال نے 2009 میں چیئرمین ریکروٹمنٹ کمیٹی کی منظوری سے سکل ڈویلپمنٹ کونسل آف پاکستان کے فزیکل ایجوکیشن ڈپلومہ پربطور فزیکل ٹیچر (PET) بھرتی کیا ۔ پہلی بار 2010 میں یہ کہہ کر نکال دیا کہ یہ ادارہ گورنمنٹ سے منظور شدہ نہیں اس لئے اس کا فزیکل ڈپلومہ قابل قبول نہیں ۔ سائل نے بھرتی کے صرف تین ماہ بعد ایک سالہ فزیکل ایجوکیشن ڈپلومہ HEC سے منظور شدہ سرحد یونیورسٹی سے مکمل کرکے اس پوسٹ کی مطلوبہ تعلیمی قابلیت مکمل کر لی تھی جس پر محکمہ نے 2010 میں ہی بحال کردیا تھا۔سائل نے تین سال کے اندر ایم ایس سی فزیکل ایجوکیشن بھی دوران ملازمت کرکے اس پوسٹ کی ہائیر تعلیم مکمل کر لی۔ مگر سائل کو حقائق جانے بغیر کسی شوکاز نوٹس کے دوبارہ 2014کو اسی بنیاد پر نکال دیا گیا کہ سکل ڈویلپمنٹ کونسل کا ارادہ رجسٹرڈ نہیں حالانکہ محکمہ اس سے پہلے 2010 میں سائل کو بھرتی کے تین ماہ بعد ایک سالہ فزیکل ڈپلومہ مکمل کرنے پر ٹرمینیٹ کرکے بحال کر چکا تھا ۔ سائل کو ٹھوس ثبوت کیساتھ یہ حقیقت معلوم ہوئی ہے کہ میرے ساتھ2009میں بھرتی ہونیوالے سکل ڈویلپمنٹ کونسل کے ڈپلومے پر ضلع پاکپتن ، لیہ ، رحیم یار خان ، وہاڑی ، اور بہاولنگر میں مستقل بنیادوں پر کام کر رہے ہیں ۔ پنجاب میں دو الگ الگ قانون ہیں سائل کی عمر 42 سال ہو کر over ageہو چکی ہے ۔ ان ٹرینڈ ٹیچر کیلئے بھی خصوصی رعایت ہے کہ اگر وہ تین سال کے اندر مطلوبہ پروفیشنل تعلیم مکمل کرلیں تو ریگولر کر لیا جاتا ہے ۔ ارباب اختیار سے التماس ہے کہ درج بالا ٹھوس دلائل ثبوت حقائق کو مدنظر رکھ کر نوکر پر بحال کیا جائے تاکہ سائل اپنے خاندان کا پیٹ پال سکے ۔

تبصرے

شیئر کریں

کوئی تبصرہ نہیں

جواب چھوڑ دیں