تحصیل لاوہ کھلی کچہری ڈرامہ بن گئی ۔۔

0
162
03اسلام آباد(شہزاد احمدملک)تحصیل لاوہ میں کھلی کچہری ڈرامہ بن کر رہ گئی عوام گھروں کو آس لیکر واپس مرادوندہ نے مشہور سات افراد قتل کیس کا معاملہ کھلی کچہری میں بھی حل نہ ہو سکا تفصیلات کے مطابق تحصیل لاوہ میں ڈی پی او ڈی سی او کی کھلی کچہری متاثرین انصاف کر وکا رونا پیٹتے رہے انصاف انصاف کرتے رہے کرتے رہے مگر ان کی کوئی سنوائی کام نہ آئی ڈی پی او چکوال نے معاملہ مزید لٹکا دیا متاثرین نے چند روز پریس کانفرنس کے زرئعے اصل صورتحال بیان کرنے کی ٹھان لی ہے معاملہ حل ہونے کے بجائے جوع کو توں رہ گیا کھلی کچہری میں یوسی پچنند کے جنرل کونسلر ملک خالد مجید کا کہنا تھا کہ ہمارا خاندان آئے روز دشمنی کی بھینٹ چڑ ھ رہا ہے ہمارے بھائی ملک خالد محمود کو پولیس دہشت گردی کا نشانہ بنا کر پابند ہ سلاسل کیا جس کی ہم اہلیان پچنند مرادوندہ بھر پور مزمت کرتے ہوئے قرآن مجید پر حلف دیتے ہیں کہ ہمارا بھائی ملک خالد محمود پر امن اور ایک معزز شہری ہے اور مقتولین کا وارث ہے مگر ڈی ایس پی عبدالرحمن ایس ایچ او لاوہ نذیر احمد راکی اور ان کے عملہ نے انہوں مذاکرات کے بہانے ڈی ایس پی آفس بلایا اور جھوٹے مقدمہ میں پابندسل کر دیا یو سی پچنند کے چیئر مین ملک بشیر احمد ملک ، ملک اسلم ،ملک امیر نواز سمیت کئی درجن افران نے ملک محمود کی حمایت میں احتجاج ریکارڈ کرایاڈیلی تلہ گنگ نیوز زرائع کے مطابق ایسے کھلی کچہریاں لگانے کا کوئی فائدہ نہیں جس میں مسائل ہی نہ سنے جائیں گورمنٹ پنجاب کو چکوال سے لاوہ لاکھوں روپے سرکاری پروٹول کر خرچ اور تیل کی مد میں ہزاروں روپے اڑا دیئے گے عوام کو منافع یہ ہوا ہے کہ گرمی اور تپتی چلاتی دھوپ مین بچارے کھرے ہو کر اپنی آس لیئے تقاریر سن کر واپس گھروں کو لوٹ گئے ۔

تبصرے

شیئر کریں

کوئی تبصرہ نہیں

جواب چھوڑ دیں