بوچھال کلاں میں حالیہ ہونے والے جھگڑے سرد مہری کی سیاست۔۔

0
103

01بوچھال کلاں (نامہ نگار )بوچھال کلاں میں حالیہ ہونے والے جھگڑے سرد مہری کی سیاست سیتھی ہاؤس کو مہنگی پڑ گئی تفصیل کے مطابق گذشتہ دنوں بوچھال کلاں میں دو گروپوں جے درمیان جھگڑا ہو گیا جس میں ایک گروپ کے آٹھ افراد زخمی ہوئے جب وہ زخمی پولیس چوکی بوچھال کلاں آئے تو پولیس چوکی بوچھال کلاں کے محرر نے ان کے خلاف پولیس چوکی پر حملہ کا مقفمہ بھی تیار کر لیااتفاق سے زؒ می ہونے والے یا مقدمہ میں ملوث زیادہ تر لوگ مسلم لیگ ن اور مسلم لیگ ن یوتھ ونگ کے تھے جن پر زخمی ہونے کے باوجود مقدمہ بھی درج ہوا اور انہیں حوالات میں بند بھی ہونا پڑا دس دن کے بعد پی ٹی آئی کے عہنما ملک اختر شہباز نے انتہائی ذہانت کا مظاہرہ دونوں گروپوں کے درمیان صلح کرا کر ان کی ضمانت کرائی سیتھی ہاؤس نے ان کی حمایت کرنے سے انکار کر دیا جس کے بعد گذشتہ روز مسلم لیگ ن کے کارکنوں اور یوتھ ونگ کے کارکنوں نے فیصلہ کیا کہ آئندہ سیتھی ہاؤس کی حمایت نہیں کریں گے اور نہ ہی ان کی حمایت میں کسی جلسہ یا میٹنگ میں شرکت کریں گے امکان ہے کہ آئندہ بوچھال کلاں میں ایک اتحاد بننے گا جس کا نزلہ سیتھی ہاؤس پر بری طرح اثرانداز ہو گا

تبصرے

شیئر کریں

کوئی تبصرہ نہیں

جواب چھوڑ دیں