لاوہ و دیگر مقامات پرائیوٹ سکولوں میں پک اینڈ ڈراپ کرنے والی گاڑیاں خطرہ ۔۔۔

0
131

3

لاوہ(تحصیل رپورٹر) لاوہ، سرکاری و پرائیویٹ سکولوں میں طلباء کو لانے والی گاڑیاں خطرہ جان بن گئیں، اٹھارہ سیٹر گاڑی پر تیس سے پینتیس جبکہ کھلی گاڑیوں پر اوورلوڈنگ کی وجہ سے چھتوں اور اطراف میں طلباء کھڑے ہونے پر مجبور، آرٹی اے سیکرٹری اور ڈی سی ا و چکوال سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔سکولوں کے ساتھ بکنگ پر چلنے والی گاڑیوں کا روٹ کے حساب سے کرایہ نامہ مرتب کیا جائے عوامی و سماجی حلقوں کا پرزور مطالبہ۔تفصیلات کے مطابق لاوہ تحصیل بھر کے مضافات ، دندہ شاہ بلاول سمیت دیگر نواحی علاقوں سے سکولوں میں طلباء /طالبات کو لانے والی گاڑیاں اوورلوڈنگ کی وجہ سے حادثات کا سبب بن سکتی ہیں۔ اٹھارہ سیٹر ویگن میں تیس سے پینتیس طلباء طالبات دھنسائے جاتے ہیں جبکہ ڈالوں اور دیگر اوپن گاڑیوں میں طلباء چھتوں پر بیٹھنے کے علاوہ گاڑیوں کے اطراف میں بھی کھڑے ہوئے ہوتے ہیں جوکہ موت کو دعوت دینے کے مترادف ہے۔متعدد باراوورلوڈنگ کی وجہ سے حادثات رونما ہو چکے ہیں مگر بچوں کے والدین متبادل سسٹم نہ ہونے کی وجہ سے بے بس ہوکر بچوں کو گاڑیوں پر بھیجنے پر مجبور ہیں۔عوامی و سماجی حلقوں نے آرٹی اے سیکرٹری اور ڈی سی چکوال سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ مذکورہ گاڑیوں کے مالکان کو کپیسٹی کے مطابق بچے بٹھانے کا پابند کیا جائے اور تمام علاقوں سے مسافت کے حساب سے کرایہ نامے مرتب کئے جائیں کیونکہ بچوں کے ساتھ بکنگ والی گاڑیاں من مانے کرایہ وصول کرتی ہیں جوکہ سراسر نا انصافی پر مبنی ہے۔

تبصرے

شیئر کریں

کوئی تبصرہ نہیں

جواب چھوڑ دیں