عوامی جان کبھی اتنی سستی دیکھی نہیں تھی۔۔۔

0
66

2

زیر نظر تصویر تلہ گنگ کی ہے تصویر میں واضح نظر آرہا ہے کہ ایک سوزوکی والے نے اندر باہر سواریوں کو بٹھایا ہے اور چھت بھرنے کی وجہ سے کچھ لوگ سائیڈ پر بھی کھڑے ہیں افسوس کی بات ہے کہ ٹریفک انتظامیہ بھی غائب ہے اور ایسے ٹرانسپورٹروں کیخلاف کارروائی نہیں کرتا شہر میں جگہ جگہ بجلی کی لٹکتی تاریں چھت پر بیٹھی ہوئی سواریوں کیلئے خطرہ بن سکتی ہیں اور کراسنگ کے دوران سائیڈ پر کھڑی سواریاں دوسری گاڑی کی زد میں آسکتی ہیں لیکن یہاں تو انسانی جان کی کسی کو پرواہ ہی نہیں اور تلہ گنگ کے چند نام نہاد صحافیوں کے کیمرے بھی خاموش ہیں حالانکہ ٹریفک انتظامیہ سے شکایت کر سکتے ہیں نہ عوامی نمائندے نظر آتے ہیں نہ ٹریفک انتظامیہ بس مفت کی تنخواہیں لے رہے ہیں اگر موٹرسائیکل پر تین سواریاں بٹھانا جرم ہے تو عوام کو گاڑیوں میں اس طرح ٹھونس کر بٹھانا کوئی جرم نہیں یہ سوال میں عوام پر چھوڑتا ہوں۔ تحریر: شہزاد احمد ملک، فوٹو: ڈیلی تلہ گنگ نیوز اینڈ اٹک اپڈیٹ

تبصرے

شیئر کریں

کوئی تبصرہ نہیں

جواب چھوڑ دیں