سرکاری مال ہے بابا اڑاتے جاؤ۔۔

0
166

02

عوام کے ٹیکس کے پیسے کی کوئی قدر نہیں جہاں بھی استعمال ہوا جیسے بھی ہوا خیر ہے۔۔ زیر نظر تصویر لاوہ شہر کے رورل ہیلتھ سنٹر کی ہے تصویر میں صاف نظر آرہا ہے کہ دن دیہاڑے بلب جل رہا ہے کوئی فکر کرنے والا نہیں ایک طرف ملک میں بجلی کی کمی ہے اور شہریوں کو اٹھارہ اٹھارہ گھنٹے لوڈشیڈنگ کا عذاب سہنا پڑتا ہے جبکہ دوسری طرف سرکاری عمارتوں کے اہلکار دن کو بھی بلب جلاتے ہیں پتہ نہیں ان کی نظر کمزور ہے یا عوام کے ٹیکس کے پیسے کو ضائع کرنا اپنا فرض عین سمجھتے ہیں کیونکہ جو ڈیوٹی ہے وہ تو کرنا تو گناہ سمجھتے ہیں لیکن شاید ٹیکس کا پیسہ ضائع کرنا ان کا فرض ہو یہ سوال میں عوام پر چھوڑتا ہوں۔ تحریر: شہزاد احمد ملک، فوٹو: ڈیلی تلہ گنگ نیوز اینڈ اٹک اپڈیٹ

تبصرے

شیئر کریں

کوئی تبصرہ نہیں

جواب چھوڑ دیں