ضلع تلہ گنگ۔۔۔ وزیراعظم کا وعدہ۔۔۔

0
500

10-4

ضلع تلہ گنگ کا نوٹیفکیشن تاحال جاری کیوں نہ ہوا کئی سوالات اٹھ گئے سوالات آج ہی نہیں اٹھے پانچ مئی 2013ء جنرل الیکشن کے چند ماہ بعد ہی ضلع تلہ گنگ کے نوٹیفکیشن کے سوالات اٹھے مگر تاحال ضلع تلہ گنگ کا نوٹیفکیشن جاری نہ ہو سکا حلقہ این اے 61 کے عوام میں بے چینی، بے یقینی پائی جا رہی ہے اتنا عرصہ گزر جانے کے باوجود بھی نوٹیفکیشن جاری نہ ہونا بات سمجھ سے بالاتر ہے شہریوں میں شدید غم و غصے کا اظہار، شہیدوں اور غازیوں کی سرزمین پر یہ ضلع تلہ گنگ کا اعلان وزیراعظم میاں نواز شریف نے کیا تھا جو آج تک ایفا نہ ہو سکا اس میں نوٹیفکیشن جاری نہ ہونے میں (ن) لیگ حلقہ این اے 61 میں دو دھڑوں میں تقسیم ہو جانے کی بھی ایک بہت بڑی وجہ ہے اور بلدیاتی الیکشن میں عوام نے خوب بدلا لیا اور ارکان اسمبلی تلہ گنگ نے اس طرف کوئی خاطر خواہ توجہ نہیں دی اور کوئی ایسا بڑا میگا پروجیکٹ کا بھی افتتاح نہ کروا سکے شہریوں نے بتایا کہ وزیراعظم صوبہ سندھ میں جا سکتے ہیں تلہ گنگ یا لاوہ میں کیوں نہیں یہ سب کمزوریاں ہمارے لیڈروں کی ہیں آج تک کسی نے بھی قومی و صوبائی اسمبلی میں ضلع تلہ گنگ کیلئے دو لفظ نہ بول سکے عوام میں مایوسی اور بے یقینی پائی جا رہی ہے جس کی وجہ سے تلہ گنگ کی سیاست میں (ن) لیگ کا زور دن بدن ٹوٹتا جا رہا ہے جبکہ پی ٹی آئی اور (ق) لیگ آگے نکلتے جا رہے ہیں سردار غلام عباس پر بھی عوام کی نظریں لگی ہوئی ہیں ضمنی الیکشن پی پی 23 میں مسلم لیگ(ن) کے حمایتی سردار غلام عباس ملک سلیم اقبال، ملک شہریار اعوان سیٹ شاید نکال سکیں جبکہ ممتاز ٹمن گروپ آزاد حیثیت سے اپنا امیدوار کھڑا کرنے کا امکان ہے پارٹی کی اندرونی چپقلش ورکروں میں بھی بڑی بے چینی پائی جا رہی ہے ضلع تلہ گنگ تا ڈیرہ اسماعیل خان موٹروے، یونیورسٹی کا قیام بھی عمل میں نہ لایا جا سکے جس سے کئی سوالات اٹھ گئے ہیں شہریوں کا کہنا ہے کہ یہ سب کچھ مقامی اور عوامی نمائندوں کی کمزوریوں کا نتیجہ ہے انہوں نے سخت غم و غصے کا اظہار کیاان کا مزید کہنا تھا کہ اب ہم بھی سوچ سمجھ کر اپنا ووٹ پول کریں گے ایک سوال کے جواب پر کہ ہم اس امیدوار کو ووٹ دیں گے جو ہمارے جائز حقوق مسائل حل کرے گا ڈیلی نیوز تحقیقاتی ٹیم کے مطابق آج بھی حلقہ این اے 61 میں ایسے لاتعداد دیہات ہیں جو بنیادی سہولتوں سے محروم ہیں جو کہ شہریوں کا بنیادی حق ہے لیکن ٹرک کی بتی کے پیچھے عوام کو لگا دیا گیا ہے عوام بھی اب باشعور ہو چکے ہیں اور وہ بھی انتقام ضرور لیں گے۔

تبصرے

شیئر کریں

کوئی تبصرہ نہیں

جواب چھوڑ دیں